WhatsApp کی کاروباری اور کامرس پالیسیوں کی تعمیل کا طریقہ

WhatsApp Business پلیٹ فارم کے لیے ہماری مدد کے مواد کی لائبریری یہاں ملاحظہ کریں۔
ہم چاہتے ہیں کہ کاروبار اپنے کسٹمرز کے ساتھ WhatsApp Business کے ذریعے پیغام رسانی کے تمام فوائد سے لطف اندوز ہوں، جس میں WhatsApp Business پلیٹ فارم اور WhatsApp Business‎ ایپ شامل ہیں۔ محفوظ اور اعلی معیار کی بات چیت کو یقینی بنانے کے لیے یہ ضروری ہے کہ تمام کاروبار اور کاروباری سلوشن فراہم کنندگان WhatsApp کی کاروباری اور کامرس پالیسیوں دونوں کو سمجھیں۔
یہ دونوں پالیسیاں WhatsApp Business پر لاگو ہوتی ہیں۔ کاروباری پالیسی وسيع نظر سے WhatsApp Business پروڈکٹس کے قابل قبول استعمال کو کنٹرول کرتی ہے اور کسٹمرز کے معیاری تجربے کو یقینی بنانے کے لیے توقعات کا تعین کرتی ہے۔ اس سے ہمیں یہ تعین کرنے میں مدد ملتی ہے کہ ہم کن کاروباری ماڈلز، اور مارکیٹس و انڈسٹریز کے مخصوص شعبوں کو پلیٹ فارم کے استعمال کی اجازت دیتے ہیں۔ کامرس پالیسی اس بات کا نظم و ضبط کرنے کے لیے استعمال کی جاتی ہے کہ آیا کاروبار اپنے پروڈکٹس اور سروسز کیٹلاگ، پیغامات کے تھریڈز، کاروباری پروفائل اور پیغامات کے ٹیمپلیٹس کے اندر فروخت کر سکتے ہیں۔
ہم تجویز کرتے ہیں کہ WhatsApp Business استعمال کرنے والا ہر فرد WhatsApp کی کاروباری اور کامرس پالیسیوں دونوں کو پڑھے، لیکن ہم یہ بھی سمجھتے ہیں کہ بعض اوقات پالیسیوں کے بعض حصوں یا پھر اس بارے میں کہ ہم پالیسیوں کو کس طرح نافذ کرتے ہیں یا پالیسیاں کچھ مخصوص کاروباروں پر کس طرح اثر انداز ہوتی ہیں، اضافی سوالات ہو سکتے ہیں۔
کاروباری اور کامرس پالیسیوں کی تعمیل
وہ کاروبار جو کامرس پالیسی میں ممنوع قرار دیے گئے پروڈکٹس اور سروسز فروخت کرتے ہیں وہ اب بھی پیغام رسانی کے لیے WhatsApp Business کا استعمال کر سکتے ہیں جب تک کہ وہ اس کو صرف فروخت سے پہلے اور بعد کے کچھ مخصوص تعاملات کے لیے استعمال کریں۔
فروخت کی ان سرگرمیوں کی کچھ مثالیں جن کی اجازت نہیں ہے:
  • اپنی کاروباری پروفائل پر ممنوع پروڈکٹس یا سروسز کی تشہیر کرنا
  • ممنوع پروڈکٹس یا سروسز کی فروخت کے بارے میں WhatsApp Business پلیٹ فارم پر ٹیمپلیٹس بنانا اور بھیجنا
  • WhatsApp پر تھریڈ کے اندر ممنوع پروڈکٹس یا سروسز کی خریداری یا ان سے متعلق ٹرانزیکشن کرنا، جیسے تھریڈ کے اندر آرڈر مکمل کرنا، خریداری شروع کرنے کے لیے پیمنٹ لینا، آرڈر کو اپ ڈیٹ کرنا یا رسید شیئر کرنا
ہم نے کامرس پالیسی میں کسٹمرز اور ممنوع قرار دیے جانے والے پروڈکٹس یا سروسز فروخت کرنے والے کاروباروں کے درمیان قابل اجازت اور ناقابل اجازت تعاملات کی کچھ مثالیں فراہم کی ہیں۔
قابل اجازت تعاملات
  • آگاہی: پروڈکٹ یا سروس کی مزید اضافی معلومات شیئر کرنا یا کسٹمر کے سوالات کا جواب دینا۔
  • آگاہی/دلچسپی/دیکھ بھال: تھریڈ میں صارف کے ساتھ کوپن یا پروموشن شیئر کرنا
  • دلچسپی: کسی ایسے صارف کے ساتھ ویب سائٹ کا لنک یا فون نمبر شیئر کرنا جو پروڈکٹ یا سروس خریدنے میں دلچسپی رکھتا ہو
ناقابل اجازت تعاملات
  • خریداری: صارف کی جانب سے تھریڈ میں ان پروڈکٹس یا سروسز کا انتخاب کرنا جو وہ خریدنا چاہتا ہے اور کاروبار کا WhatsApp پر پیمنٹ کی معلومات اکٹھی کرنا
  • خریداری: ممنوع پروڈکٹ یا سروس کی فروخت کے بعد رسید کی اطلاع بھیجنا
WhatsApp پر پروڈکٹس اور سروسز کی فروخت کے حوالے سے ٹرانزیکشنز کی یہ پابندیاں صرف کامرس پالیسی میں ممنوع قرار دیے گئے زمروں پر لاگو ہوتی ہیں۔ WhatsApp Business پر ہر اس پروڈکٹ یا سروس کی فروخت کی اجازت ہے جسے کامرس پالیسی کے مطابق فروخت کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ مثال کے طور پر، ٹی شرٹس ممنوع آئٹم نہیں ہیں، اس لیے انہیں WhatsApp Business پلیٹ فارم یا WhatsApp Business ایپ کے ذریعے خریدا جا سکتا ہے۔
کسٹمرز سے رابطہ کرنا
ہماری کاروباری پالیسی کے مطابق، کاروبار WhatsApp پر کسی سے صرف اس صورت میں رابطہ کر سکتے ہیں اگر اس شخص نے:
  • کاروبار کو اپنا موبائل فون نمبر فراہم کیا ہے
  • کاروبار کی جانب سے WhatsApp کے ذریعے رابطہ کیے جانے کے لیے رضا مندی دی ہے
کاروباری مواصلات کے ذریعے لوگوں کو الجھانا، دھوکہ دینا، فراڈ کرنا، گمراہ کرنا، اسپام کرنا یا حیران کرنا ہماری کاروباری پالیسی کی خلاف ورزی ہے۔ اس کے علاوہ، کاروبار انفرادی پیمنٹ کارڈ کا مکمل نمبر، مالی اکاؤنٹ نمبر، ذاتی شناختی کارڈ نمبر، یا شناخت کی دیگر حساس معلومات شیئر نہیں کر سکتے اور نہ ہی لوگوں کو ایسا کرنے کے لیے کہہ سکتے ہیں۔
اگر کوئی کاروبار کسٹمرز کو WhatsApp Business پلیٹ فارم پر 24 گھنٹے کی ونڈو کے بعد کاروبار سے متعلق پیغام بھیجنا چاہتا ہے تو اس کے لیے کسٹمرز کا کاروبار کے ساتھ چیٹ کرنے کے لیے آپٹ ان کرنا ضروری ہے۔
نوٹ: اگر کوئی صارف کسی کاروبار سے سوال پوچھنے یا مزید معلومات حاصل کرنے کے لیے رابطہ کرتا ہے تو اس کا مطلب آپٹ ان کرنا نہیں ہے۔ کاروبار کو اب بھی صارف سے WhatsApp پر آئندہ کے لیے فعال طور پر پیغامات وصول کرنے کا آپٹ ان حاصل کرنا ہوگا۔ کاروباری پالیسی میں آپٹ ان کے تقاضوں اور بہترین طرز عمل کے بارے میں مزید جانیں۔
کامرس پالیسی کے مخصوص زمروں کو نیویگیٹ کرنا
کامرس پالیسی کے کچھ زمرے دوسروں کے مقابلے میں زیادہ پیچیدہ ہیں۔ ان میں سے کچھ زمروں کے لیے کامرس پالیسی کی خلاف ورزیوں سے بچنے کا خلاصہ یہاں دیا جا رہا ہے۔
ادویات، چاہے وہ طبی ماہر کی تجویز کردہ، فرحت بخش، یا دیگر نوعیت کی ہوں
ہم ان کاروباروں کو اجازت نہیں دے رہے ہیں جن کی بنیادی کاروباری سرگرمی براہ راست فارماسوٹیکل ادویات کی فروخت اور فروخت سے منسلک سرگرمی ہے۔ یہ پابندی نسخے اور بغیر نسخے والی ادویات دونوں پر ان کی عالمی یا مقامی منظوری کے اسٹیٹسز سے قطع نظر لاگو ہوتی ہے۔ فارمیسیوں کو ادویات، طبی آلات اور کامرس پالیسی میں ممنوع قرار دی جانے والی دیگر اشیاء کی تشہیر یا فروخت سے منع کیا گیا ہے۔ ان کاروباروں کو کسٹمر کیئر کے ان پیغامات کے لیے بھی WhatsApp Business استعمال کرنا منع ہے جن کا تعلق طبی سروسز کی ایڈمنسٹریشن سے نہیں ہے۔ مثال کے طور پر نسخے ڈاکٹروں یا دیگر طبی سروسز کی جانب سے شیئر کیے جا سکتے ہیں۔ تاہم، نسخے براہ راست WhatsApp پلیٹ فارم میں فروخت نہیں کیے جا سکتے۔
تاہم، علیحدہ کلینکل لیبارٹری یا مریضوں کی نگہداشت کی سروسز فراہم کرنے والی فارمیسیاں ان سروسز کو WhatsApp Business پر رجسٹر کر سکتی ہیں بشرطیکہ وہ درج ذیل تقاضوں پر پورا اترتی ہوں:
  • WhatsApp Business اکاؤنٹ کا نام کسی طبی سروس کا حوالہ دیتا ہے (مثال کے طور پر، 'کلینک'، 'لیبارٹریز'، 'ٹیسٹنگ'، یا 'ویکسین'۔)
  • کاروبار کی ویب سائٹ واضح طور پر بتاتی ہے کہ وہ ویکسین لگانے اور/یا طبی ٹیسٹنگ کی سہولت فراہم کرتے ہیں
طبی سروسز فراہم کرنے والی فارمیسیوں کو دیگر طبی سروسز، جیسے ڈاکٹرز کے دفاتر اور اسپتال، کی طرح کسٹمرز کے ساتھ تعامل کرنے کی اجازت ہوگی۔ مینوفیکچررز اور ہیلتھ کیئر کی سروسز جو براہ راست فروخت میں ملوث نہیں ہیں انہیں بھی اجازت ہے۔
منظور شدہ طبی سروسز کی سرگرمیوں کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • کسی شخص کی ویکسین لگوانے کی اہلیت کے بارے میں ذاتی نوعیت کے لحاظ سے اپ ڈیٹس بھیجنا
  • ٹیسٹنگ اور ویکسین لگانے کے لیے اپائنٹمنٹس شیڈول کرنا
  • ٹیسٹنگ اور ویکسینوں کے بارے میں سوالات کے جوابات دینا
  • اپنی طبی سروسز کے بارے میں اکثر پوچھے گئے سوالات، بشمول COVID-19 اور ویکسین کی معلومات، کا جواب دینے کے لیے چیٹ بوٹ تشکیل دینا
  • وزٹ کے بعد کے سروے اور اپائنٹمنٹ فالو اپس بھیجنا
کھانے کے غیر محفوظ سپلیمنٹس
کامرس پالیسی کے مطابق سپلیمنٹس ممنوع ہیں اور انہیں کیٹلاگ، شاپس، پیغام کے تھریڈز، کاروباری پروفائل، اور/یا پیغام کے ٹیمپلٹس میں فروخت کرنے کی اجازت نہیں ہے۔
ممنوع سپلیمنٹس کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • اینابولک اسٹیرائیڈز
  • کائٹوسان (چیٹوسان)
  • کامفری
  • ڈی ہائیڈرو پیانڈرواسٹیرون
  • ایفیڈرا
  • انسانی نشوونما کے ہارمونز
  • پروٹین بارز اور پروٹین پاؤڈر
  • وٹامنز
ڈیجیٹل سروسز
موبائل ریچارجز، کیبل ٹی وی پیکجز اور انٹرنیٹ پیکس جیسی سروسز WhatsApp پر فروخت کی اجازت ہے۔
ایسی ڈیجیٹل سروسز جن کا بنیادی کاروبار سبسکرپشنز، قابل ڈاؤن لوڈ مواد یا ڈیجیٹل مواد کی لائبریری تک رسائی فراہم کرنا ہے وہ WhatsApp استعمال نہیں کر سکتی ہیں۔ ہر کیس کی نوعیت کے لحاظ سے، ہم کچھ کاروباروں کو کاروباری مواصلات کے لیے محدود پیمانے پر WhatsApp Business پلیٹ فارم استعمال کرنے کی اجازت دے سکتے ہیں۔
ممنوع ڈیجیٹل سروسز کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • اسٹریمنگ سروسز کی سبسکرپشنز
  • کلاؤڈ اسٹوریج
  • VPN سروسز
  • گیم کرنسی
  • ڈاؤن لوڈ کوڈز
  • ای بُکس
  • آڈیو بُکس
اصلی، ورچوئل یا جعلی کرنسی
اصل رقم سے مراد نقد یا نقد کے مساوی اِنسٹرومنٹس ہیں جن کی حقیقی دنیا میں مالیاتی قدر ہوتی ہے۔
ممنوع اصل کرنسی کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • امریکی ڈالر
  • چیک
  • پری پیڈ ڈیبٹ کارڈ
  • گفٹ کارڈ
ورچوئل کرنسیوں کو نجی اداروں کی طرف سے جاری کیا جاتا ہے اور عام طور پر حقیقی دنیا میں مخصوص کمیونٹیز سے باہر ان کی مالیاتی قدر نہیں ہوتی ہے۔
ورچوئل کرنسی کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • گیم کرنسی
  • کرپٹو کرنسی
جعلی کرنسیوں سے مراد جعلی یا نقلی کرنسی یا فنانشل اِنسٹرومنٹس ہیں۔
الکحل
اگر کاروبار کا بنیادی کاروباری ماڈل الکحل کی فروخت ہے (بشمول الکوحل والے مشروبات اور الکحل بنانے والے کٹس) تو وہ ان پروڈکٹس کو فروخت کرنے کے لیے WhatsApp پلیٹ فارم استعمال نہیں کر سکتا۔
تاہم، اگر کوئی کاروبار اپنے کاروباری ماڈل کے جزو کے طور پر دیگر سامان یا الکحل سے متعلق اشیاء (جیسے گلاس، کولر، شراب کی بوتل کے لیے ہولڈر، اور الکحل کے بارے میں کتابیں یا DVD) کے ساتھ الکحل فروخت کرتا ہے تو وہ ایسی پیغام رسانی کے لیے WhatsApp پلیٹ فارم کا استعمال کر سکتا ہے جو فروخت سے متعلق نہیں ہے۔ وہ پروڈکٹ کیٹلاگ میں الکحل درج نہیں کر سکتے۔
ہتھیار
اگر کاروبار کا بنیادی کاروباری ماڈل اور سرگرمی ہتھیار، گولہ بارود یا دھماکہ خیز مواد کا اجراء، فروخت یا استعمال ہے تو وہ ان پروڈکٹس کی فروخت کے لیے WhatsApp پلیٹ فارم کا استعمال نہیں کر سکتے۔
ممنوع ہتھیاروں کی کچھ مثالیں یہ ہیں:
  • آتشیں اسلحہ اور آتشیں اسلحہ کے پرزے
  • پینٹ بال گنز
  • BB گنز
  • آتش بازی
  • کالی مرچ کا اسپرے
  • ٹیزر
  • گن رینجز
  • گن شوز
تاہم، اگر ہتھیاروں کی فروخت کاروباری ماڈل کا ایک جزو ہے یا اگر کاروبار حفاظتی تربیت یا قانونی ہتھیار کے لائسنس پروموٹ کرتا ہے تو وہ WhatsApp پلیٹ فارم کو ایسی پیغام رسانی کے لیے استعمال کر سکتا ہے جس کا فروخت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ وہ پروڈکٹ کیٹلاگ میں ہتھیار، گولہ بارود اور دھماکہ خیز مواد درج نہیں کر سکتا۔
قابل اطلاق قانون کی تعمیل کرنا کاروبار کی ذمہ داری ہے۔ ان اشیاء اور سروسز کی تازہ ترین فہرست کے لیے کامرس پالیسی دیکھیں جن کی WhatsApp Business پر فروخت یا تشہیر کی اجازت نہیں ہے۔
اگر کوئی کسٹمر مارکیٹ یا انڈسٹری کے کسی مخصوص شعبے سے کامرس پالیسی میں ممنوع قرار دیا گیا کوئی سامان یا سروس خریدنے کے بارے میں بات چیت شروع کرتا ہے تو براہ کرم کسٹمر کو کہیں کہ وہ مارکیٹ یا انڈسٹری کے مخصوص ممنوع شعبے سے متعلق بات چیت کے لیے آپ سے کسی دوسرے ذریعے سے رابطہ کرے۔
متعلقہ مضامین
WhatsApp Business پلیٹ فارم کی پالیسی کے نفاذ کے بارے میں
کیا اس سے مدد ملی؟
جی ہاں
نہیں